Tum Mujhe Chor Gaye Thay

ROHAAN

Senior Member
Aug 14, 2016
907
602
393
83306436_1574727512698838_2054536435948453528_n.jpg


تم مجھے چھوڑ گئے تھے

یاد آ جاتا ہے عاشور کی اس رات کا دکھ
‎مجھ سے دیکھا نہیں جاتا کسی سادات کا دکھ

‎آپ کی بیٹی نہیں , آپ نہیں سمجھیں گے
‎خالی جاتی ہوئی واپس کسی بارات کا دکھ

‎جب کوئی دکھ نہیں موجود تو کیسی خوشیاں
‎یعنی ہم سے کہیں بڑھ کے ہے سماوات کا دکھ

‎تم مجھے چھوڑ گئے تھے وہ تمھیں چھوڑ گیا
‎اسے کہتے ہیں مری جان مکافات کا دکھ

‎لذت ِ ہجر کے ثمرات کا نہ گنوا مجھ کو
‎میں نے جھیلا ہوا ہے یار ملاقات کا دکھ

‎مجھ سے چھینی ہے مہک بھیگی ہوئی مٹّی کی
‎پکّے آنگن نے دیا ہے مجھے برسات کا دکھ

‎آپ ٹہنی سے فقط نوچ کے کھا لیتے ہیں
‎آپ پوچھیں نا کبھی پیڑ سے ثمرات کا دکھ

‎میری اطراف میں پھیلے ہوئے یہ جھوٹے لوگ
‎میری اطراف میں پھیلا ہوا سقراط کا دکھ

‎یہ بہت دیر سے گھر رات پلٹتے لڑکے
‎کاش سمجھیں یہ کبھی ماؤں کے خدشات کا دکھ

‎اپنے اپنے ہیں فراوانی کے بھی دکھ ساگر
‎تھر کا دکھ اور ہے,اور ہے مری گلیات کا دکھ
 
  • Like
Reactions: Angela
Top