ہم اور فاش راز کریں، توبہ کیجئے دنیا سے ساز &#

rehanckl

Newbie
Jan 28, 2010
1,485
1,215
0
30
ہم اور فاش راز کریں، توبہ کیجئے
دنیا سے ساز باز کریں، توبہ کیجئے

کیا خوب دوستوں نے وفا کا صلہ دیا
اب کیا زباں دراز کریں، توبہ کیجئے

ہوش و خِرد کے سارے سفینے ڈبو دئیے
کیا ایسے دل پہ ناز کریں، توبہ کیجئے

ہم تو ازل سے سر کو جھکائے ہیں جان من
اب پیش کیا جواز کریں، توبہ کیجئے

برسوں جسے لگائے رکھا اپنے سینے سے
افشا بھلا وہ راز کریں، توبہ کیجئے

لب بستگی ہے شرط کیا آدابِ عشق کی
ہم اور احتراز کریں، توبہ کیجئے

ہم تو صدفؔ متاعِ محبت کے ہیں امین
غیروں کو کارساز کریں، توبہ کیجئے
 
  • Like
Reactions: nrbhayo
Top